کوئٹہ : بلوچستان کے سیاسی بحران میں مزید اضافہ، وزرا، مشیر اور پارلیمانی سیکریٹریز مستعفیٰ

کوئٹہ ( پولیٹیکل رپورٹر ) بلوچستان کابینہ کے ناراض وزرا، مشیر اور پارلیمانی سیکریٹریز مستعفی ہوگئے ہیں۔ مستعفیٰ ہونے والے وزراء نے وزیر اعلی بلوچستان جام کمال کو مستعفیٰ ہونے کے لیے بدھ کی شام تک کی مہلت دی تھی۔ ڈیلی جستجو ڈاٹ کام اور جستجو نیوز کے مطابق بلوچستان میں جاری سیاسی بحران میں مزید اضافہ ہوگیا ہے۔ اور بلوچستان کابینہ کے 3وزراء ، 2 مشیروں اور 4 پارلیمانی سیکرٹریز نے اپنے عہدوں سے استعفی دے دیا ہے۔ پارلیمانی سیکرٹیرز لیلی ترین، بشریٰ رند، ماہ جبین شیران اور لالہ رشید بلوچ بھی مستعفی ہونیوالوں میں شامل ہیں۔ جب کہ صوبائی مشیرحاجی محمد خان لہڑی اور اکبر آسکانی اور وزراء عبدالرحمن کھیتران، میر اسد بلوچ اور ظہور بلیدی نے بھی استعفیٰ دے دیا ہے۔ واضح رہے منگل کے روز صوبائی وزیر خزانہ ظہور بلیدی نے کہا تھا کہ وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال پر بی اے پی (باپ پارٹی) کے 11 اور چند اتحادی اراکین نے عدم اعتماد کا اظہار کیا ہے، ہم تحریک عدم اعتماد کی صورت میں اسمبلی جائیں اس سے بہتر ہے کہ وزیراعلیٰ خود ہی فوری استعفیٰ دیں۔ جب کہ صوبائی وزیر اسد بلوچ کا کہنا تھا کہ وزیراعلیٰ اپنے اتحادیوں کے ساتھ وعدوں پر پورا نہیں اترے، انہوں نے خود کو عقل کل سمجھا ہماری کسی بات کو خاطر میں نہیں لائے، وہ عہدے سے چمٹے رہنے پر بضد ہیں لیکن اراکین کا اعتماد انہیں حاصل نہیں رہا، جام کمال کو بدھ کی شام 6 بجے تک کا وقت دیتے ہیں، اگر انہوں نے استعفیٰ نہیں دیا تو تحریک عدم اعتماد سمیت دیگر آپشنز پر غور کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں