استنبول : واٹس ایپ چھوڑ کر لاکھوں صارفین تُرک ایپلی کیشن استعمال کرنے لگے

استنبول ( انٹرنیشنل سائنس و ٹیکنالوجی ڈیسک ) واٹس ایپ کی نئی پالیسی کے بعد اس کے استعمال کرنے والوں کی بڑی تعدادکے دوسرے ذرائع پر منتقل ہونے کا سلسلہ جاری ہے جس کا دیگر میسجنگ فورم کے ساتھ ساتھ ترک ایپ کو بھی بے پناہ فائدہ ہورہا۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق ’’ترک سیل‘‘ موبائل فون آپریٹر کی بنائی گئی میسجنگ ایپلی کیشن Bipکے جنرل مینیجر مراد ارکان کا کہنا ہے کہ گذشتہ کچھ دنوں سے ایپلی کیشن یومیہ 20 لاکھ مرتبہ انسٹال کی جارہی ہے۔ان کا کہناہے کہ 6 جنوری کو واٹس ایپ کے اعلان کے بعد سے بپ کی یومیہ ڈاؤن لوڈنگ کی شرح میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔مراد ارکان نے ترک کہاوت کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ برا ہمسایہ آپ کو جائیداد کا مالک بنا دیتا ہے۔ جمعے سے لے کر اب تک 64 لاکھ سے زائد لوگ بپ پر منتقل ہوچکے ہیں اور اس وقت ہم ایک قابل اعتماد نام بن کر ابھررہے ہیں۔ یہ اعتماد روز بروز بڑھتا جارہا ہےا ور اب ہم ٹیلی گرام کے برابر آچکے ہیں۔بپ کے جی ایم کا کہنا ہے کہ صرف مقامی سطح پرہمارے صارفین کی تعداد 60 لاکھ سے تجاوز کرچکی ہے اور ہم توقع کرتے ہیں یہ تعداد بہت جلد ایک کروڑ سے بڑھ جائے گی۔واضح رہے کہ واٹس ایپ کی نئی پرائیوسی اور معلومات کے تبادلے سے متعلق پالیسی کے اعلان کے بعد اس کے استعمال کرنے والوں کی ایک بڑی تعداد متبادل ذرائع کا رخ کررہی ہے جن میں سگنل اور ٹیلی گرام نامی میسجنگ پلیٹ فورمز کے نام سر فہرست ہیں تاہم مسلم دنیا میں ترک ایپ بپ کو بھی تیزی سے مقبولیت حاصل ہورہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں