مظفر آباد : سکیل اپ گریڈیشن کیلئے دارالحکومت مظفرآباد نیوسیکرٹریٹ میں آزادکشمیر بھر کے معلمین و معلمات کا احتجاج ‘ پولیس کا اساتذہ پر لاٹھی چارج ‘ آنسو گیس کی شیلنگ ‘ متعدد زخمی ‘بیسیوں معلمین کو گرفتار کرلیا گیانیو سیکرٹریٹ میدان جنگ بن گیا ڈپٹی کمشنر نے دوران تصادم ایک ٹیچر کے جاں بحق ہونے کی خبروں کو خلاف حقائق قرار دے دیا

مظفرآباد ( نمائندہ خصوصی ) سکیل اپ گریڈیشن کیلئے دارالحکومت مظفرآباد نیوسیکرٹریٹ میں آزادکشمیر بھر کے معلمین و معلمات کا احتجاج ‘ پولیس کا اساتذہ پر لاٹھی چارج ‘ آنسو گیس کی شیلنگ ‘ متعدد زخمی ‘بیسیوں معلمین کو گرفتار کرلیا گیا۔ نیو سیکرٹریٹ میدان جنگ بن گیا۔ تفصیلات کے مطابق ریاست بھر کے اساتذہ نے حکومت کو سکیل اپ گریڈیشن کیلئے 6جنوری 2021کی ڈیڈ لائن دے رکھی تھی ۔ نوٹیفکیشن جاری نہ ہونے پر گزشتہ روزآزادکشمیر بھر کے استاتذہ نے نیو سیکرٹریٹ میں احتجاج کیا ۔ اندر گھسنے کی کوشش کی جس پر پولیس نے لاٹھی چارج کردیا ۔ آنسو گیس کی بھاری شیلنگ کی گئی۔ جس سے متعدد اساتذہ زخمی ہو گئے اور بیس سے زائد اساتذہ کو گرفتا رکرلیا گیا۔ اساتذہ نے کہا ہے کہ ہم اپنے منظور شدہ جائز مطالبے کو لے کر احتجاج کررہے تھے ۔ وزیراعظم نے ہمارے مطالبے کو منظور کیا اور محکمہ تعلیم نے سمری محکمہ مالیات کو بھیج رکھی تھی ۔ سیکرٹری مالیات نوٹیفکیشن جاری نہیں کررہے ۔ ہم پرامن طریقے سے احتجاج کررہے تھے ہمارے اوپر تشددکیاگیا۔ لاٹھی چارج اور آنسو گیس کی بھاری شیلنگ کی گئی۔گرفتاریاں کی گئیں جن کی جنتی بھی مذمت کی جائے کم ہے ۔ گرفتار اساتذہ فوری رہا کئے جائیں ۔اپ گریڈیشن کا نوٹیفکیشن جاری کیا جائے ۔ ہم اپنا حق لے کر رہیں گے۔دریں اثناء ڈپٹی کمشنر مظفرآباد عبدالحمید کیانی نے کہا ہے کہ پولیس کے لاٹھی چارج سے ایک ٹیچر کے جاں بحق ہونے کے حوالہ سے سوشل میڈیا پر منفی پروپیگنڈا کیا جا رہا ہے. آج ایک شہباز نامی چہلہ بانڑی کے رہائشی ٹیچر اپنے گھر پر وفات ہوئی. جو سی ایم ایچ میں 2:55 بجے دن مردہ حالت میں پہنچا. جبکہ پولیس اور اساتذہ کے درمیان تصادم کا واقع 3:00 بجے سہ پہر پیش آیا. انہوں نے کہا کہ چند شرپسند عناصر اس واقع کو غلط رنگ دینا چاہتے ہیں. شہر کے امن وامان کو بحال رکھنا اور ریاست کی رٹ قائم رکھنا انتظامیہ اور پولیس کی ﺫمہ داری ہے. اساتذہ ہمارے لیے قابل احترام ہیں. لیکن کسی کو قانون ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں دی جا سکتی. آج پیش آنے والے واقع پر ہمیں افسوس ہے. ہم اساتذہ سے بھی اپیل کرتے ہیں کہ وہ اس واقعہ کی آڑ میں اپنے مذموم مقاصد پورے کرنے والوں کی باتوں میں نہ آئیں اور پروپیگنڈا کرنے والوں کی حوصلہ شکنی کریں. پولیس کے لاٹھی چارج سے کوئی ہلاکت نہیں ہوئی اس حوالہ سے سی ایم ایچ اور ایمز سے بھی تصدیق کی جا سکتی ہے. میڈیا سے بھی اپیل ہے کہ وہ ﺫمہ داری کا مظاہرہ کرے اور اس حوالہ سےکوئی بھی خبر دینے سے پہلے انتظامیہ کا موقف بھی لے

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں