اسلام آباد : یو اے ای قیادت کو بتادیا اسرائیل کو تسلیم نہیں کریں گے، وزیر خارجہ

بھارت اپنے مسائل سے توجہ ہٹانے کیلئے بگاڑ پیدا کرنے کی کوشش کر رہا ہے، شاہ محمود قریشی فوٹو: فائل

اسلام آباد / ملتان (نمائندگان خصوصی)  وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی نے کہا ہے کہ انہوں نے یو اے اے کی قیادت کو بتادیا ہے کہ مسئلہ فلسطین کے حل تک اسرائیل کو تسلیم نہیں کریں گے۔ ملتان میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ متحدہ عرب امارات کے دورے کے دوران انہوں نے ابوظہبی ،شارجہ اور دبئی میں پاکستانیوں کے مشکلات پر بات کی، پاکستانیوں کے لیے متحدہ عرب امارات کے ویزوں کا مسئلہ عارضی ہے، متحدہ عرب امارات یا سعودی عرب بھارت کو پاکستان پر فوقیت نہیں دیتے، بہت جلد عرب امارات کی قیادت پاکستان کادورہ کرے گی۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہم نے عرب امارات قیادت سے افغان امن عمل میں پاکستان کے کردار پر بات کی، اسرائیل کے بارے میں عرب امارات کا موقف بھی سنا اور اسرائیل سے تعلقات کے بارے میں واضح موقف پیش کیا، ہمیں کسی کے دباؤ پر نہیں پاکستان کو سامنے رکھ کر فیصلے کرنے ہیں، اسرائیل سے متعلق نہ تو ہم دباوَ برداشت کریں گے اور نہ ہی ہم پر کوئی پریشر ہے، میں نے واضح کردیا کہ فلسطین اور مسئلہ کشمیرپر ہمارا موقف دنیا پر عیاں ہے، مسئلہ فلسطین کے حل تک اسرائیل سے تعلق نہیں رکھیں گے۔ اس  سے قبل میڈیا سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے شاہ محمود قریشی نے کہا کہ بھارت مسلسل سیزفائر کی خلاف ورزی کر رہا ہے، ایل او سی پر یو این آبزرور کی گاڑی پر حملہ انتہائی تشویشناک ہے،امن برقرار رکھنے والوں پو فائرنگ بہت بڑا جرم ہے، اس کی تحقیقات ہونی چاہئیں اور پاکستان نے اس کی درخواست کی ہے۔ وزیرخارجہ نے کہا کہ ہماری خواہش ہے کہ امن برقرار رہے اور خطے کی صورتحال میں مزید بگاڑ پیدا نہ ہو،بھارت ایسی حرکتیں کر رہا ہے جس سے خطے کا امن تباہ ہو، بھارت منصوبہ بندی کرکے پاکستان کو نقصان پہنچانا چاہتا ہے، اطلاعات ہیں کہ بھارت بہانہ بنا کر کوئی سرجیکل اسٹرائیک کرسکتا ہے،بھارت نے کوئی غیر ذمہ دارانہ حرکت کی تو اسے بروقت اور مناسب جواب ملے گا۔ شاہ محمود قریشی نے کہا کہ ہم ہمسایہ ممالک سے معاشی تعلقات کا فروغ چاہتے ہیں، بھارت اپنے اندرونی مسائل سے توجہ ہٹانے کیلئے بگاڑ پیدا کرنے کی کوشش کر رہا ہے، بھارت نے کوئی حرکت کی تو جواب دینے پر مجبور ہوں گے، افغانستان میں امن ہواتو پورا خطہ مستفید ہو گا، افغانستان سے توجہ ہٹی تو اس کا ذمہ دار بھارت ہو گا۔ اپوزیشن اتحاد پی ڈی ایم کی جانب سے اسمبلیوں سے استعفوں کی دھمکیوں پر شاہ محمود قریشی نے کہا کہ پی ڈی ایم میں یکسوئی نظر نہیں آ رہی، استعفوں کے معاملے پر پی ڈی ایم میں بہت انتشار ہے، پی ڈی ایم میں ایک حصہ استعفے دینا چاہتا ہے ایک حصہ مخالف ہے، اگر وہ استعفوں میں سنجیدہ ہیں تو اس میں رکاوٹ کیا ہے؟، اپوزیشن اپنے استعفے اسپیکر کے پاس فوری طور پر جمع کروا سکتی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں