179

اسلام آباد : نادرا آپ کے قومی شناختی کارڈ کو ڈیجیٹل والیٹ میں تبدیل کرے گا۔

اسلام آباد : حکومت کے ڈیجیٹل پاکستان وژن کے تحت، نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کمپیوٹرائزڈ قومی شناختی کارڈز کو ڈیجیٹل والیٹ بنانے کے لیے کام کر رہی ہے اور اس سال کے آخر تک موجودہ ایپلی کیشن کی اپ ڈیٹ دستیاب ہونے کا امکان ہے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق نادرا کے سربراہ طارق ملک نے کہا کہ حکومت کے اس وژن کو حقیقت میں بدلتے ہوئے ہم نے قومی شناختی کارڈ کے درخواست گزاروں کی سہولت کے لیے آن لائن پورٹل کے ذریعے ڈیجیٹل آئی ڈی کا سنگ بنیاد رکھا ہے۔ ’’پاک آئیڈینٹیٹی‘‘ موبائل ایپ لانچ کر دی گئی۔ ڈیجیٹل والیٹ کی خصوصیات بتاتے ہوئے نادرا کے چیئرمین نے کہا کہ یہ ایک منفرد ڈیجیٹل آئی ڈی ہوگی جو لوگوں کی سہولت کو یقینی بنائے گی اور روایتی فزیکل آئی ڈی کو ختم کرکے پاکستان میں نیشنل آئی ڈی ایکو سسٹم میں انقلاب برپا کرے گی۔ تو یہ ایک اہم پیشرفت ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس طرح کی ٹیکنالوجی ڈیجیٹل کنٹیکٹ لیس بینکنگ، مالیاتی شمولیت، کاروبار کرنے میں آسانی اور ریموٹ آئیڈینٹیفکیشن اور ای-کے وائی سی (صارفین کو الیکٹرانک طور پر جانیں) متعارف کرانے کے ساتھ ای گورننس کے اقدامات میں مثبت نتائج پیش کرتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ یہ ایپ نادرا آفس یا سفارت خانے میں گئے بغیر بائیو میٹرک فنگر پرنٹس، چہرے کی شناخت اور اسمارٹ فونز کی مدد سے کسی شخص کے شناختی کارڈ کی پروسیسنگ کے لیے درکار دستاویزات کو اسکین کرنے میں مدد دیتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مختصر عرصے میں بیرون ملک مقیم 75,000 پاکستانی اس ایپلی کیشن کی مدد سے اپنے قومی شناختی کارڈ (جسے نیکوپ بھی کہا جاتا ہے) حاصل کرنے میں کامیاب ہو گئے ہیں جن کی دو فیکٹر تصدیق گھر پر موجود ہے۔ یہ ایپلیکیشن اینڈرائیڈ اور آئی او ایس دونوں پلیٹ فارمز پر دستیاب ہے۔ طارق ملک نے کہا کہ اس ایپلی کیشن کے اجراء کے ساتھ ہی پاکستان سمارٹ فون کیمروں کی مدد سے کنٹیکٹ لیس بائیو میٹرک اور تصدیق کا نظام نافذ کرنے والا پہلا ملک بن گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ 75000 سمندر پار پاکستانیوں کے ساتھ اس کامیاب ٹیسٹنگ کے بعد نادرا اب ڈیجیٹل والیٹ متعارف کرائے گا۔ نادرا نے اب تک ملک بھر میں 120 ملین بالغ افراد کو رجسٹر کیا ہے جو کہ ملک کی 18 سال سے زائد عمر کی آبادی کا 96 فیصد ہے، بلوچستان میں 83 فیصد اور دیگر صوبوں میں 96 فیصد سے زائد ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نادرا ملک کی 517 تحصیلوں میں سے 20 میں جون تک مراکز کھولے جائیں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ نادرا 96 موبائل وین بھی لانچ کرے گا جو ملک بھر میں ان کی تعداد 356 تک لے جائیں گی۔ آئندہ انتخابات اور ڈیٹا کی تصدیق میں نادرا کا کردار، چیئرمین نادرا نے کہا کہ ای وی ایم ہے یا نہیں، الیکشن نادرا کے ڈیٹا سے ہی کرائے جائیں گے۔ اس میں نادرا کا کوئی کردار نہیں، یہ الیکشن کمیشن کا دائرہ کار ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں