اسلام آباد : گورنر اسٹیٹ بینک نے پہلے مصر کابیڑاغرق کیا اب پاکستان کی باری ہے، خواجہ آصف

اسلام آباد : رہنما مسلم لیگ (ن) خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ رضا باقر نے پہلے مصر کا بیڑا غرق کیا اور اب پاکستان کی باری ہے۔ قومی اسمبلی کا اجلاس سپیکر اسد قیصر کی زیر صدارت میں ہوا جس میں ڈالر کی بڑھتی ہوئی قدر پر (ن) لیگ کے رہنما مرتضیٰ جاوید عباسی نے کڑی تنقید کی اور کہا کہ موجودہ حکومت سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار پر الزام لگاتی تھی کہ انہوں نے ڈالر کو مصنوعی کنٹرول کررکھا تھا، اب حکومت کو چیلنج ہے کہ وہ عارضی طورپر ہی ڈالر کو ایک سو روپے تک لے کر آجائے۔ اس پر عمر ایوب خان نے کہا (ن) لیگ نے 23.6 ارب ڈالر کا قرض صرف روپے کو مستحکم رکھنے کے لیے لیا جس پر 9 ارب ڈالر سود ادا کیا جارہا ہے۔ ڈالر کی قیمت بڑھنے پر گورنراسٹیٹ بینک رضا باقر کی انوکھی منطق پر لیگی رہنما خواجہ آصف نے کہا کہ ڈالر بڑھنے سے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو فائدہ ہوتا ہے، گورنر اسٹیٹ بینک بتائیں کہ 22 کروڑ عوام کا کیا بنے گا، انھوں نے پہلے مصر کا بیڑا غرق کیا اور اب پاکستان کی باری ہے، وہ آئی ایم ایف کے نمائندے ہیں کام دکھا کر واپس باہر چلے جائیں گے۔ اجلاس کے دوران سی پیک منصوبوں کی تفصیلات بھی ایوان میں پیش کی گئیں۔ وزارت منصوبہ بندی نے بتایا کہ اس وقت 25ارب ڈالر کے 39 منصوبے مکمل ہوچکے ہیں یا زیر تکمیل ہیں۔ پیپلزپارٹی کے رہنما نوید قمر نے کورم کی نشاندہی کی جب کہ اسپیکرنے کورم ٹوٹنے پر اجلاس غیرمعینہ مدت کے لیے ملتوی کردیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں