اسلام آباد : وزیر خزانہ کا سندھ اور بلوچستان میں گندم کے بروقت اجرا میں تاخیر اور قیمتوں میں اضافے کا نوٹس

اسلام آباد ( کامرس رپورٹر ) وزیر خزانہ نے سندھ اور بلوچستان میں گندم کے بروقت اجرا میں تاخیر اور قیمتوں میں اضافے کا نوٹس لے لیا۔ وزیر خزانہ شوکت ترین کی زیر صدارت قومی پرائس مانیٹرنگ کمیٹی کا اجلاس منعقد ہوا جس میں دوران بریفنگ بتایا گیا کہ گزشتہ ہفتے کے دوران اشیاء ضروریہ کی قیمتوں میں 0.10 فیصد کی کمی ہوئی، ٹماٹر، پیاز، دال مونگ اور دال ماش سمیت 10 اشیاء کی قیمتوں میں کمی ہوئی، گزشتہ ہفتے 21 اشیاء کی قیمتوں میں استحکام رہا جب کہ قیمتوں کے حساس اشاریوں میں کمی حکومتی اقدامات کی بدولت ہے۔ بریفنگ میں بتایا گیا کہ رواں مالی سال کی پہلی سہ ماہی میں مہنگائی کی مجموعی شرح8.58 فیصد رہی، گزشتہ مالی سال پہلی سہ ماہی میں مہنگائی کی شرح 8.84 فیصد تھی۔ وزیر خزانہ نے آٹا کی قیمتوں میں کمی کے حوالے سے حکومت پنجاب اور اسلام آباد انتظامیہ کی ستائش کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب اور اسلام آباد میں بروقت گندم جاری کرنے سے آٹے کی قیمتوں پر دباؤ کم ہوا۔ وزیر خزانہ نے سندھ اور بلوچستان میں گندم کے بروقت اجراء میں تاخیر اور قیمتوں میں اضافے کا نوٹس لیتے ہوئے کہا کہ آٹے کی قیمتوں پر قابو پانے کے لئے سندھ اور بلوچستان حکومت گندم کا بروقت اجراء کرے۔ سیکرٹری قومی تحفظ خوراک نے کمیٹی کو سرکاری شعبے میں گندم کے ذخیرے کے حوالے سے بریفنگ دی، کمیٹی نے عالمی مارکیٹ میں اشیاء خورد و نوش کی قیمتوں میں اضافے کا بھی جائزہ لیا۔ وزیر خزانہ نے وزارت صنعت و پیداوار اور ایف بی آر ڈیوٹی میں رعایت کے ذریعے خوردنی تیل کی قیمتوں میں کمی کی ہدایت دی، سیکریٹری صنعت و پیداوار نے کمیٹی کو 50 ہزار میٹرک ٹن چینی کے ٹینڈر کے حوالےسے بھی آگاہ کیا، کمیٹی نے وزارت تجارت کو پیاز کی برآمد کے لئے ای سی سی کے سامنے اچھی تجاویز پیش کرنے کی ہدایت بھی کردی۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں